گزرے جو اپنے یاروں کی صحبت میں چار دن

گزرے جو اپنے یاروں کی صحبت میں چار دن

ایسا لگا بسر ہوئے جنت میں چار دن

عمر خضر کی اس کو تمنا کبھی نہ ہو

انسان جی سکے جو محبت میں چار دن

جب تک جیے نبھائیں گے ہم ان سے دوستی

اپنے رہے جو دوست مصیبت میں چار دن

اے جان آرزو وہ قیامت سے کم نہ تھے

کاٹے ترے بغیر جو غربت میں چار دن

پھر عمر بھر کبھی نہ سکوں پا سکا یہ دل

کٹنے تھے جو بھی کٹ گئے راحت میں چار دن

جو فقر میں سرور ہے شاہی میں وہ کہاں

ہم بھی رہے ہیں نشۂ دولت میں چار دن

اس آگ نے جلا کے یہ دل راکھ کر دیا

اٹھتے تھے جوشؔ شعلے جو وحشت میں چار دن

(1248) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Guzre Jo Apne Yaron Ki Sohbat Mein Chaar Din In Urdu By Famous Poet A G Josh. Guzre Jo Apne Yaron Ki Sohbat Mein Chaar Din is written by A G Josh. Enjoy reading Guzre Jo Apne Yaron Ki Sohbat Mein Chaar Din Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by A G Josh. Free Dowlonad Guzre Jo Apne Yaron Ki Sohbat Mein Chaar Din by A G Josh in PDF.