غیرت عشق سلامت تھی انا زندہ تھی

غیرت عشق سلامت تھی انا زندہ تھی

وہ بھی دن تھے کہ رہ و رسم وفا زندہ تھی

قیس کو دوش نہ دو رکھیو نہ فرہاد کو نام

انہی لوگوں سے محبت کی ادا زندہ تھی

شہر بیمار کے ہر کوچہ و بام و در پر

ہم بھی مرتے تھے کہ جب خلق خدا زندہ تھی

بجھ گئیں شمعیں تو دم توڑ گئے جھونکے بھی

جس طرح زہر رقابت سے ہوا زندہ تھی

یاد ایام کہ صحرائے محبت میں فرازؔ

جرس قافلۂ دل کی صدا زندہ تھی

(1368) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Ghairat-e-ishq Salamat Thi Ana Zinda Thi In Urdu By Famous Poet Ahmad Faraz. Ghairat-e-ishq Salamat Thi Ana Zinda Thi is written by Ahmad Faraz. Enjoy reading Ghairat-e-ishq Salamat Thi Ana Zinda Thi Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Ahmad Faraz. Free Dowlonad Ghairat-e-ishq Salamat Thi Ana Zinda Thi by Ahmad Faraz in PDF.