منزلیں ایک سی آوارگیاں ایک سی ہیں

منزلیں ایک سی آوارگیاں ایک سی ہیں

مختلف ہو کے بھی سب زندگیاں ایک سی ہیں

کوئی قاصد ہو کہ ناصح کوئی عاشق کہ عدو

سب کی اس شوخ سے وابستگیاں ایک سی ہیں

دشت مجنوں نہ سہی تیشۂ فرہاد سہی

سفر عشق میں واماندگیاں ایک سی ہیں

یہ الگ بات کہ احساس جدا ہوں ورنہ

راحتیں ایک سی افسردگیاں ایک سی ہیں

صوفی و رند کے مسلک میں سہی لاکھ تضاد

مستیاں ایک سی وارفتگیاں ایک سی ہیں

وصل ہو ہجر ہو قربت ہو کہ دوری ہو فرازؔ

ساری کیفیتیں سب تشنگیاں ایک سی ہیں

(286) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Manzilen Ek Si Aawargiyan Ek Si Hain In Urdu By Famous Poet Ahmad Faraz. Manzilen Ek Si Aawargiyan Ek Si Hain is written by Ahmad Faraz. Enjoy reading Manzilen Ek Si Aawargiyan Ek Si Hain Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Ahmad Faraz. Free Dowlonad Manzilen Ek Si Aawargiyan Ek Si Hain by Ahmad Faraz in PDF.