یوں ہی مر مر کے جئیں وقت گزارے جائیں

یوں ہی مر مر کے جئیں وقت گزارے جائیں

زندگی ہم ترے ہاتھوں سے نہ مارے جائیں

اب زمیں پر کوئی گوتم نہ محمد نہ مسیح

آسمانوں سے نئے لوگ اتارے جائیں

وہ جو موجود نہیں اس کی مدد چاہتے ہیں

وہ جو سنتا ہی نہیں اس کو پکارے جائیں

باپ لرزاں ہے کہ پہنچی نہیں بارات اب تک

اور ہم جولیاں دلہن کو سنوارے جائیں

ہم کہ نادان جواری ہیں سبھی جانتے ہیں

دل کی بازی ہو تو جی جان سے ہارے جائیں

تج دیا تم نے در یار بھی اکتا کے فرازؔ

اب کہاں ڈھونڈھنے غم خوار تمہارے جائیں

(2464) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Yunhi Mar Mar Ke Jien Waqt Guzare Jaen In Urdu By Famous Poet Ahmad Faraz. Yunhi Mar Mar Ke Jien Waqt Guzare Jaen is written by Ahmad Faraz. Enjoy reading Yunhi Mar Mar Ke Jien Waqt Guzare Jaen Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Ahmad Faraz. Free Dowlonad Yunhi Mar Mar Ke Jien Waqt Guzare Jaen by Ahmad Faraz in PDF.