دل میں خیال نرگس جانانہ آ گیا

دل میں خیال نرگس جانانہ آ گیا

پھولوں سے کھیلتا ہوا دیوانہ آ گیا

بادل کے اٹھتے ہی مے و پیمانہ آ گیا

بجلی کے ساتھ ساتھ پری خانہ آ گیا

مستوں نے اس ادا سے کیا رقص نو بہار

پیمانہ کیا کہ وجد میں مے خانہ آ گیا

اس چشم مئےفروش کی تاثیر کیا کہوں

ہونٹوں تک آج آپ ہی پیمانہ آ گیا

معلوم کس کو قیس کی دیوانگی کی شان

ہنگامہ سا بپا ہے کہ دیوانہ آ گیا

اخترؔ غضب تھی عہد جوانی کی داستاں

آنکھوں کے آگے ایک پری خانہ آ گیا

(443) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Dil Mein KHayal-e-nargis-e-jaanana Aa Gaya In Urdu By Famous Poet Akhtar Shirani. Dil Mein KHayal-e-nargis-e-jaanana Aa Gaya is written by Akhtar Shirani. Enjoy reading Dil Mein KHayal-e-nargis-e-jaanana Aa Gaya Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Akhtar Shirani. Free Dowlonad Dil Mein KHayal-e-nargis-e-jaanana Aa Gaya by Akhtar Shirani in PDF.