کمال جوش جنوں میں رہا میں گرم طواف

کمال جوش جنوں میں رہا میں گرم طواف

خدا کا شکر سلامت رہا حرم کا غلاف

یہ اتفاق مبارک ہو مومنوں کے لیے

کہ یک زباں ہیں فقیہان شہر میرے خلاف

تڑپ رہا ہے فلاطوں میان غیب و حضور

ازل سے اہل خرد کا مقام ہے اعراف

ترے ضمیر پہ جب تک نہ ہو نزول کتاب

گرہ کشا ہے نہ رازیؔ نہ صاحب کشافؔ

سرور و سوز میں ناپائیدار ہے ورنہ

مے فرنگ کا تہ جرعہ بھی نہیں ناصاف

(671) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Kamal-e-josh-e-junun Mein Raha Main Garm-e-tawaf In Urdu By Famous Poet Allama Iqbal. Kamal-e-josh-e-junun Mein Raha Main Garm-e-tawaf is written by Allama Iqbal. Enjoy reading Kamal-e-josh-e-junun Mein Raha Main Garm-e-tawaf Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Allama Iqbal. Free Dowlonad Kamal-e-josh-e-junun Mein Raha Main Garm-e-tawaf by Allama Iqbal in PDF.