ترے عشق کی انتہا چاہتا ہوں

ترے عشق کی انتہا چاہتا ہوں

مری سادگی دیکھ کیا چاہتا ہوں

ستم ہو کہ ہو وعدۂ بے حجابی

کوئی بات صبر آزما چاہتا ہوں

یہ جنت مبارک رہے زاہدوں کو

کہ میں آپ کا سامنا چاہتا ہوں

ذرا سا تو دل ہوں مگر شوخ اتنا

وہی لن ترانی سنا چاہتا ہوں

کوئی دم کا مہماں ہوں اے اہل محفل

چراغ سحر ہوں بجھا چاہتا ہوں

بھری بزم میں راز کی بات کہہ دی

بڑا بے ادب ہوں سزا چاہتا ہوں

(346) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Tere Ishq Ki Intiha Chahta Hun In Urdu By Famous Poet Allama Iqbal. Tere Ishq Ki Intiha Chahta Hun is written by Allama Iqbal. Enjoy reading Tere Ishq Ki Intiha Chahta Hun Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Allama Iqbal. Free Dowlonad Tere Ishq Ki Intiha Chahta Hun by Allama Iqbal in PDF.