یوں ہاتھ نہیں آتا وہ گوہر یک دانہ

یوں ہاتھ نہیں آتا وہ گوہر یک دانہ

یک رنگی و آزادی اے ہمت مردانہ

یا سنجر و طغرل کا آئین جہانگیری

یا مرد قلندر کے انداز ملوکانہ

یا حیرت فارابیؔ یا تاب و تب رومیؔ

یا فکر حکیمانہ یا جذب کلیمانہ

یا عقل کی روباہی یا عشق یداللہی

یا حیلۂ افرنگی یا حملۂ ترکانہ

یا شرع مسلمانی یا دیر کی دربانی

یا نعرۂ مستانہ کعبہ ہو کہ بت خانہ

میری میں فقیری میں شاہی میں غلامی میں

کچھ کام نہیں بنتا بے جرأت رندانہ

(1096) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Yun Hath Nahin Aata Wo Gauhar-e-yak-dana In Urdu By Famous Poet Allama Iqbal. Yun Hath Nahin Aata Wo Gauhar-e-yak-dana is written by Allama Iqbal. Enjoy reading Yun Hath Nahin Aata Wo Gauhar-e-yak-dana Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Allama Iqbal. Free Dowlonad Yun Hath Nahin Aata Wo Gauhar-e-yak-dana by Allama Iqbal in PDF.