داخل دفتر

کلرکوں کی سبھی میزوں پہ انورؔ

ہر اک فائل مزے سے سو رہی ہے

اگرچہ کام سارے رک گئے ہیں

مگر میٹنگ برابر ہو رہی ہے

(312) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

DaKHil-e-daftar In Urdu By Famous Poet Anwar Masood. DaKHil-e-daftar is written by Anwar Masood. Enjoy reading DaKHil-e-daftar Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Anwar Masood. Free Dowlonad DaKHil-e-daftar by Anwar Masood in PDF.