جب رخ حسن سے نقاب اٹھا

جب رخ حسن سے نقاب اٹھا

بن کے ہر ذرہ آفتاب اٹھا

ڈوبی جاتی ہے ضبط کی کشتی

دل میں طوفان اضطراب اٹھا

مرنے والے فنا بھی پردہ ہے

اٹھ سکے گر تو یہ حجاب اٹھا

شاہد مئے کی خلوتوں میں پہنچ

پردۂ نشۂ شراب اٹھا

ہم تو آنکھوں کا نور کھو بیٹھے

ان کے چہرے سے کیا نقاب اٹھا

عالم حسن سادگی توبہ

عشق کھا کھا کے پیچ و تاب اٹھا

ہوش نقص خودی ہے اے احسانؔ

لا اٹھا شیشۂ شراب اٹھا

(560) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Jab RuKH-e-husn Se Naqab UTha In Urdu By Famous Poet Ehsan Danish. Jab RuKH-e-husn Se Naqab UTha is written by Ehsan Danish. Enjoy reading Jab RuKH-e-husn Se Naqab UTha Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Ehsan Danish. Free Dowlonad Jab RuKH-e-husn Se Naqab UTha by Ehsan Danish in PDF.