عجز اہل ستم کی بات کرو

عجز اہل ستم کی بات کرو

عشق کے دم قدم کی بات کرو

بزم اہل طرب کو شرماؤ

بزم اصحاب غم کی بات کرو

بزم ثروت کے خوش نشینوں سے

عظمت چشم نم کی بات کرو

ہے وہی بات یوں بھی اور یوں بھی

تم ستم یا کرم کی بات کرو

خیر ہیں اہل دیر جیسے ہیں

آپ اہل حرم کی بات کرو

ہجر کی شب تو کٹ ہی جائے گی

روز وصل صنم کی بات کرو

جان جائیں گے جاننے والے

فیضؔ فرہاد و جم کی بات کرو

(308) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Ijz-e-ahl-e-sitam Ki Baat Karo In Urdu By Famous Poet Faiz Ahmad Faiz. Ijz-e-ahl-e-sitam Ki Baat Karo is written by Faiz Ahmad Faiz. Enjoy reading Ijz-e-ahl-e-sitam Ki Baat Karo Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Faiz Ahmad Faiz. Free Dowlonad Ijz-e-ahl-e-sitam Ki Baat Karo by Faiz Ahmad Faiz in PDF.