کب تک دل کی خیر منائیں کب تک رہ دکھلاؤ گے

کب تک دل کی خیر منائیں کب تک رہ دکھلاؤ گے

کب تک چین کی مہلت دو گے کب تک یاد نہ آؤ گے

بیتا دید امید کا موسم خاک اڑتی ہے آنکھوں میں

کب بھیجو گے درد کا بادل کب برکھا برساؤ گے

عہد وفا یا ترک محبت جو چاہو سو آپ کرو

اپنے بس کی بات ہی کیا ہے ہم سے کیا منواؤ گے

کس نے وصل کا سورج دیکھا کس پر ہجر کی رات ڈھلی

گیسوؤں والے کون تھے کیا تھے ان کو کیا جتلاؤ گے

فیضؔ دلوں کے بھاگ میں ہے گھر بھرنا بھی لٹ جانا تھی

تم اس حسن کے لطف و کرم پر کتنے دن اتراؤ گے

(265) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Kab Tak Dil Ki KHair Manaen Kab Tak Rah Dikhlaoge In Urdu By Famous Poet Faiz Ahmad Faiz. Kab Tak Dil Ki KHair Manaen Kab Tak Rah Dikhlaoge is written by Faiz Ahmad Faiz. Enjoy reading Kab Tak Dil Ki KHair Manaen Kab Tak Rah Dikhlaoge Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Faiz Ahmad Faiz. Free Dowlonad Kab Tak Dil Ki KHair Manaen Kab Tak Rah Dikhlaoge by Faiz Ahmad Faiz in PDF.