کس شہر نہ شہرہ ہوا نادانئ دل کا

کس شہر نہ شہرہ ہوا نادانئ دل کا

کس پر نہ کھلا راز پریشانئ دل کا

آؤ کریں محفل پہ زر زخم نمایاں

چرچا ہے بہت بے سر و سامانئ دل کا

دیکھ آئیں چلو کوئے نگاراں کا خرابہ

شاید کوئی محرم ملے ویرانئ دل کا

پوچھو تو ادھر تیر فگن کون ہے یارو

سونپا تھا جسے کام نگہبانئ دل کا

دیکھو تو کدھر آج رخ باد صبا ہے

کس رہ سے پیام آیا ہے زندانئ دل کا

اترے تھے کبھی فیضؔ وہ آئینۂ دل میں

عالم ہے وہی آج بھی حیرانئ دل کا

(201) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Kis Shahr Na Shohra Hua Nadani-e-dil Ka In Urdu By Famous Poet Faiz Ahmad Faiz. Kis Shahr Na Shohra Hua Nadani-e-dil Ka is written by Faiz Ahmad Faiz. Enjoy reading Kis Shahr Na Shohra Hua Nadani-e-dil Ka Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Faiz Ahmad Faiz. Free Dowlonad Kis Shahr Na Shohra Hua Nadani-e-dil Ka by Faiz Ahmad Faiz in PDF.