جب تیری سمندر آنکھوں میں

یہ دھوپ کنارا شام ڈھلے

ملتے ہیں دونوں وقت جہاں

جو رات نہ دن جو آج نہ کل

پل بھر کو امر پل بھر میں دھواں

اس دھوپ کنارے پل دو پل

ہونٹوں کی لپک

بانہوں کی چھنک

یہ میل ہمارا جھوٹ نہ سچ

کیوں رار کرو کیوں دوش دھرو

کس کارن جھوٹی بات کرو

جب تیری سمندر آنکھوں میں

اس شام کا سورج ڈوبے گا

سکھ سوئیں گے گھر در والے

اور راہی اپنی رہ لے گا

(1656) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Jab Teri Samundar Aankhon Mein In Urdu By Famous Poet Faiz Ahmad Faiz. Jab Teri Samundar Aankhon Mein is written by Faiz Ahmad Faiz. Enjoy reading Jab Teri Samundar Aankhon Mein Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Faiz Ahmad Faiz. Free Dowlonad Jab Teri Samundar Aankhon Mein by Faiz Ahmad Faiz in PDF.