میں تیرے سپنے دیکھوں

برکھا برسے چھت پر میں تیرے سپنے دیکھوں

برف گرے پربت پر میں تیرے سپنے دیکھوں

صبح کی نیل پری میں تیرے سپنے دیکھوں

کوئل دھوم مچائے میں تیرے سپنے دیکھوں

آئے اور اڑ جائے میں تیرے سپنے دیکھوں

باغوں میں پتے مہکیں میں تیرے سپنے دیکھوں

شبنم کے موتی دہکیں میں تیرے سپنے دیکھوں

اس پیار میں کوئی دھوکا ہے

تو نار نہیں کچھ اور ہے شے

ورنہ کیوں ہر ایک سمے

میں تیرے سپنے دیکھوں

(616) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Main Tere Sapne Dekhun In Urdu By Famous Poet Faiz Ahmad Faiz. Main Tere Sapne Dekhun is written by Faiz Ahmad Faiz. Enjoy reading Main Tere Sapne Dekhun Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Faiz Ahmad Faiz. Free Dowlonad Main Tere Sapne Dekhun by Faiz Ahmad Faiz in PDF.