سرو دشبانہ

غم ہے اک کیف میں فضائے حیات

خامشی سجدۂ نیاز میں ہے

حسن معصوم خواب ناز میں ہے

اے کہ تو رنگ و بو کا طوفاں ہے

اے کہ تو جلوہ گر بہار میں ہے

زندگی تیرے اختیار میں ہے

پھول لاکھوں برس نہیں رہتے

دو گھڑی اور ہے بہار شباب

آ کہ کچھ دل کی سن سنا لیں ہم

آ محبت کے گیت گا لیں ہم

میری تنہائیوں پہ شام رہے؟

حسرت دید ناتمام رہے؟

دل میں بیتاب ہے صدائے حیات

آنکھ گوہر نثار کرتی ہے

آسماں پر اداس ہیں تارے

چاندنی انتظار کرتی ہے

آ کہ تھوڑا سا پیار کر لیں ہم

زندگی زرنگار کر لیں ہم

(765) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Surud-e-shabana In Urdu By Famous Poet Faiz Ahmad Faiz. Surud-e-shabana is written by Faiz Ahmad Faiz. Enjoy reading Surud-e-shabana Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Faiz Ahmad Faiz. Free Dowlonad Surud-e-shabana by Faiz Ahmad Faiz in PDF.