تم اپنی کرنی کر گزرو

اب کیوں اس دن کا ذکر کرو

جب دل ٹکڑے ہو جائے گا

اور سارے غم مٹ جائیں گے

جو کچھ پایا کھو جائے گا

جو مل نہ سکا وہ پائیں گے

یہ دن تو وہی پہلا دن ہے

جو پہلا دن تھا چاہت کا

ہم جس کی تمنا کرتے رہے

اور جس سے ہر دم ڈرتے رہے

یہ دن تو کئی بار آیا

سو بار بسے اور اجڑ گئے

سو بار لٹے اور بھر پایا

اب کیوں اس دن کا ذکر کرو

جب دل ٹکڑے ہو جائے گا

اور سارے غم مٹ جائیں گے

تم خوف و خطر سے درگزرو

جو ہونا ہے سو ہونا ہے

گر ہنسنا ہے تو ہنسنا ہے

گر رونا ہے تو رونا ہے

تم اپنی کرنی کر گزرو

جو ہوگا دیکھا جائے گا

(8019) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Tum Apni Karni Kar Guzro In Urdu By Famous Poet Faiz Ahmad Faiz. Tum Apni Karni Kar Guzro is written by Faiz Ahmad Faiz. Enjoy reading Tum Apni Karni Kar Guzro Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Faiz Ahmad Faiz. Free Dowlonad Tum Apni Karni Kar Guzro by Faiz Ahmad Faiz in PDF.