دن کچھ ایسے گزارتا ہے کوئی

دن کچھ ایسے گزارتا ہے کوئی

جیسے احساں اتارتا ہے کوئی

دل میں کچھ یوں سنبھالتا ہوں غم

جیسے زیور سنبھالتا ہے کوئی

آئنہ دیکھ کر تسلی ہوئی

ہم کو اس گھر میں جانتا ہے کوئی

پیڑ پر پک گیا ہے پھل شاید

پھر سے پتھر اچھالتا ہے کوئی

دیر سے گونجتے ہیں سناٹے

جیسے ہم کو پکارتا ہے کوئی

(1249) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Din Kuchh Aise Guzarta Hai Koi In Urdu By Famous Poet Gulzar. Din Kuchh Aise Guzarta Hai Koi is written by Gulzar. Enjoy reading Din Kuchh Aise Guzarta Hai Koi Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Gulzar. Free Dowlonad Din Kuchh Aise Guzarta Hai Koi by Gulzar in PDF.