ایک پرواز دکھائی دی ہے

ایک پرواز دکھائی دی ہے

تیری آواز سنائی دی ہے

صرف اک صفحہ پلٹ کر اس نے

ساری باتوں کی صفائی دی ہے

پھر وہیں لوٹ کے جانا ہوگا

یار نے کیسی رہائی دی ہے

جس کی آنکھوں میں کٹی تھیں صدیاں

اس نے صدیوں کی جدائی دی ہے

زندگی پر بھی کوئی زور نہیں

دل نے ہر چیز پرائی دی ہے

آگ میں کیا کیا جلا ہے شب بھر

کتنی خوش رنگ دکھائی دی ہے

(2201) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Ek Parwaz Dikhai Di Hai In Urdu By Famous Poet Gulzar. Ek Parwaz Dikhai Di Hai is written by Gulzar. Enjoy reading Ek Parwaz Dikhai Di Hai Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Gulzar. Free Dowlonad Ek Parwaz Dikhai Di Hai by Gulzar in PDF.