وراثت

اپنی مرضی سے تو مذہب بھی نہیں اس نے چنا تھا

اس کا مذہب تھا جو ماں باپ سے ہی اس نے وراثت میں لیا تھا

اپنے ماں باپ چنے کوئی یہ ممکن ہی کہاں ہے؟

اس پہ یہ ملک بھی لازم تھا کہ ماں باپ کا گھر تھا اس میں

یہ وطن اس کا چناؤ تو نہیں تھا۔۔۔

وہ تو کل نو ہی برس کا تھا، اسے کیوں چن کر

فرقہ وارانہ فسادات نے کل قتل کیا۔۔۔!

(203) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Wirasat In Urdu By Famous Poet Gulzar. Wirasat is written by Gulzar. Enjoy reading Wirasat Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Gulzar. Free Dowlonad Wirasat by Gulzar in PDF.