بہت روشن ہے شام غم ہماری

بہت روشن ہے شام غم ہماری

کسی کی یاد ہے ہم دم ہماری

غلط ہے لا تعلق ہیں چمن سے

تمہارے پھول اور شبنم ہماری

یہ پلکوں پر نئے آنسو نہیں ہیں

ازل سے آنکھ ہے پر نم ہماری

ہر اک لب پر تبسم دیکھنے کی

تمنا کب ہوئی ہے کم ہماری

کہی ہے ہم نے خود سے بھی بہت کم

نہ پوچھو داستان غم ہماری

(353) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Bahut Raushan Hai Sham-e-gham Hamari In Urdu By Famous Poet Habib Jalib. Bahut Raushan Hai Sham-e-gham Hamari is written by Habib Jalib. Enjoy reading Bahut Raushan Hai Sham-e-gham Hamari Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Habib Jalib. Free Dowlonad Bahut Raushan Hai Sham-e-gham Hamari by Habib Jalib in PDF.