دل نے کیا ہے قصد سفر گھر سمیٹ لو

دل نے کیا ہے قصد سفر گھر سمیٹ لو

جانا ہے اس دیار سے منظر سمیٹ لو

آزادگی میں شرط بھی ہے احتیاط کی

پرواز کا ہے اذن مگر پر سمیٹ لو

حملہ ہے چار سو در و دیوار شہر کا

سب جنگلوں کو شہر کے اندر سمیٹ لو

بکھرا ہوا ہوں صرصر شام فراق سے

اب آ بھی جاؤ اور مجھے آ کر سمیٹ لو

رکھتا نہیں ہے کوئی نگفتہ کا یاں حساب

جو کچھ ہے دل میں اس کو لبوں پر سمیٹ لو

(715) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Dil Ne Kiya Hai Qasd-e-safar Ghar SameT Lo In Urdu By Famous Poet Jaun Eliya. Dil Ne Kiya Hai Qasd-e-safar Ghar SameT Lo is written by Jaun Eliya. Enjoy reading Dil Ne Kiya Hai Qasd-e-safar Ghar SameT Lo Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Jaun Eliya. Free Dowlonad Dil Ne Kiya Hai Qasd-e-safar Ghar SameT Lo by Jaun Eliya in PDF.