مر رہتے ہیں در پر ترے دو چار ہمیشہ

مر رہتے ہیں در پر ترے دو چار ہمیشہ

ہے جور و جفا تجھ کو سزا وار ہمیشہ

عاشق ترا مرنے کو ہے تیار ہمیشہ

دکھلا نہ مژہ خنجر خوں خار ہمیشہ

اک چھیڑ نکالے ہے نئی یار ہمیشہ

رہتا ہے مرے درپئے آزار ہمیشہ

اللہ سلامت رکھے تیرے لب شیریں

سنوایا کرے باتیں مزے دار ہمیشہ

ہے ڈر سے ترے عالم بالا تہ و بالا

لٹکے ہے تری عرش پہ تلوار ہمیشہ

جوں حلقۂ در در پہ ترے صبح سے تا صبح

رہتا ہے ترا طالب دیدار ہمیشہ

اظہار کروں جس سے میں احوال کو اپنے

احوال تباہ اس کا رہے یار ہمیشہ

(411) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Mar Rahte Hain Dar Par Tere Do-chaar Hamesha In Urdu By Famous Poet Joshish Azimabadi. Mar Rahte Hain Dar Par Tere Do-chaar Hamesha is written by Joshish Azimabadi. Enjoy reading Mar Rahte Hain Dar Par Tere Do-chaar Hamesha Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Joshish Azimabadi. Free Dowlonad Mar Rahte Hain Dar Par Tere Do-chaar Hamesha by Joshish Azimabadi in PDF.