ہر چند بھرے دل میں ہیں لاکھوں ہی گلے پر

ہر چند بھرے دل میں ہیں لاکھوں ہی گلے پر

کیا کہئے کہ کھلتا نہیں منہ وقت ملے پر

بے درد وہ ایسا ہے کہ مرہم کی جگہ ہائے

چھڑکے ہے نمک میرے ہر اک زخم چھلے پر

تا دل کو نہ واشد ہو تو کیا لطف ملے ہائے

کھلتی ہے جو بو غنچۂ گل کی تو کھلے پر

مشہور جوانی میں ہو وہ کیوں نہ جگت باز

میلان طبیعت تھا لڑکپن سے ضلے پر

ہم گلشن حیرت میں ہیں پرواز کہاں کی

جوں بلبل تصویر کبھی ٹک نہ ہلے پر

سن وصف دہن دیجئے کچھ منہ سے پیارے

مجھ شاعر مفلس کی ہے گزران صلے پر

کس منہ سے بیاں کیجئے وہ لطف کہ جرأتؔ

دشنام جو واں ملتی ہیں ٹک آنکھ ملے پر

(706) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Har-chand Bhare Dil Mein Hain Lakhon Hi Gile Par In Urdu By Famous Poet Jurat Qalandar Bakhsh. Har-chand Bhare Dil Mein Hain Lakhon Hi Gile Par is written by Jurat Qalandar Bakhsh. Enjoy reading Har-chand Bhare Dil Mein Hain Lakhon Hi Gile Par Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Jurat Qalandar Bakhsh. Free Dowlonad Har-chand Bhare Dil Mein Hain Lakhon Hi Gile Par by Jurat Qalandar Bakhsh in PDF.