اتنا بتلا مجھے ہرجائی ہوں میں یار کہ تو

اتنا بتلا مجھے ہرجائی ہوں میں یار کہ تو

میں ہر اک شخص سے رکھتا ہوں سروکار کہ تو

کم ثباتی مری ہر دم ہے مخاطب بہ حباب

دیکھیں تو پہلے ہم اس بحر سے ہوں پار کہ تو

ناتوانی مری گلشن میں یہ ہی بحثے ہے

دیکھیں اے نکہت گل ہم ہیں سبک بار کہ تو

دوستی کر کے جو دشمن ہوا تو جرأتؔ کا

بے وفا وہ ہے پھر اے شوخ ستم گار کہ تو

(704) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Itna Batla Mujhe Harjai Hun Main Yar Ki Tu In Urdu By Famous Poet Jurat Qalandar Bakhsh. Itna Batla Mujhe Harjai Hun Main Yar Ki Tu is written by Jurat Qalandar Bakhsh. Enjoy reading Itna Batla Mujhe Harjai Hun Main Yar Ki Tu Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Jurat Qalandar Bakhsh. Free Dowlonad Itna Batla Mujhe Harjai Hun Main Yar Ki Tu by Jurat Qalandar Bakhsh in PDF.