تن میں دم روک میں بہ دیر رکھا

تن میں دم روک میں بہ دیر رکھا

آؤ جی کس نے تم کو گھیر رکھا

ہم گئے واں تو یاں وہ آیا واہ

خوب قسمت نے ہیر پھیر رکھا

کر گیا وہ ہی راہ عشق کو طے

یاں قدم جس نے ہو دلیر رکھا

سب کو عاجز کیا فلک نے پر ایک

آہوئے دل پہ غم کو شیر رکھا

جا کے بیٹھے جو کوئے یار میں ہم

واں سے باہر قدم نہ پھیر رکھا

بعد مدت وہ دیکھ کر بولا

کس نے یاں خاک کا یہ ڈھیر رکھا

شکر اے درد عشق تو نے سدا

زندگانی سے ہم کو سیر رکھا

کیسا گھبرا گیا وہ کل ہم نے

ٹک جو رستے میں اس کو گھیر رکھا

خیر ہو یا الٰہی جرأتؔ نے

عاشقی میں قدم کو پھیر رکھا

(516) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Tan Mein Dam Rok Main Ba Der Rakha In Urdu By Famous Poet Jurat Qalandar Bakhsh. Tan Mein Dam Rok Main Ba Der Rakha is written by Jurat Qalandar Bakhsh. Enjoy reading Tan Mein Dam Rok Main Ba Der Rakha Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Jurat Qalandar Bakhsh. Free Dowlonad Tan Mein Dam Rok Main Ba Der Rakha by Jurat Qalandar Bakhsh in PDF.