نہ سمجھا گیا ابر کیا دیکھ کر

نہ سمجھا گیا ابر کیا دیکھ کر

ہوا تھا مری چشم تر کی طرف

ٹپکتا ہے پلکوں سے خوں متصل

نہیں دیکھتے ہم جگر کی طرف

(729) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Na Samjha Gaya Abr Kya Dekh Kar In Urdu By Famous Poet Mir Taqi Mir. Na Samjha Gaya Abr Kya Dekh Kar is written by Mir Taqi Mir. Enjoy reading Na Samjha Gaya Abr Kya Dekh Kar Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Mir Taqi Mir. Free Dowlonad Na Samjha Gaya Abr Kya Dekh Kar by Mir Taqi Mir in PDF.