ابرو سے مہ نو نے کہاں خم مارا

ابرو سے مہ نو نے کہاں خم مارا

ہونٹوں سے ترے لعل نے کب دم مارا

زلفوں کو تری ہم بھی پریشاں دیکھیں

اک جمع کو ان دونوں نے برہم مارا

(215) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

In Urdu By Famous Poet Mir Taqi Mir. is written by Mir Taqi Mir. Enjoy reading  Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Mir Taqi Mir. Free Dowlonad  by Mir Taqi Mir in PDF.