اندیشۂ مرگ سے ہے سینہ سب ریش

اندیشۂ مرگ سے ہے سینہ سب ریش

ٹکڑے ہے جگر جیسے لباس درویش

ہاتھوں سے جو آج ہوسکے کر لیجے

پھر کل تو ہمیں ہے اک قیامت درپیش

(354) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

In Urdu By Famous Poet Mir Taqi Mir. is written by Mir Taqi Mir. Enjoy reading  Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Mir Taqi Mir. Free Dowlonad  by Mir Taqi Mir in PDF.