چرخ تک دھوم ہے کس دھوم سے آیا سہرا

چرخ تک دھوم ہے کس دھوم سے آیا سہرا

چاند کا دائرہ لے زہرہ نے گایا سہرا

جسے کہتے ہیں خوشی اس نے بلائیں لے کر

کبھی چوما کبھی آنکھوں سے لگایا سہرا

رشک سے لڑتی ہیں آپس میں الجھ کر لڑیاں

باندھنے کو جو ترے سر پہ اٹھایا سہرا

صاف آتی ہیں نظر آب گہر کی لہریں

جنبش باد سحر نے جو ہلایا سہرا

(652) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

In Urdu By Famous Poet Mirza Ghalib. is written by Mirza Ghalib. Enjoy reading  Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Mirza Ghalib. Free Dowlonad  by Mirza Ghalib in PDF.