خود اپنے دل میں خراشیں اتارنا ہوں گی

خود اپنے دل میں خراشیں اتارنا ہوں گی

ابھی تو جاگ کے راتیں گزارنا ہوں گی

ترے لیے مجھے ہنس ہنس کے بولنا ہوگا

مرے لیے تجھے زلفیں سنوارنا ہوں گی

تری صدا سے تجھی کو تراشنا ہوگا

ہوا کی چاپ سے شکلیں ابھارنا ہوں گی

ابھی تو تیری طبیعت کو جیتنے کے لیے

دل و نگاہ کی شرطیں بھی ہارنا ہوں گی

ترے وصال کی خواہش کے تیز رنگوں سے

ترے فراق کی صبحیں نکھارنا ہوں گی

یہ شاعری یہ کتابیں یہ آیتیں دل کی

نشانیاں یہ سبھی تجھ پہ وارنا ہوں گی

(1194) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

KHud Apne Dil Mein KHarashen Utarna Hongi In Urdu By Famous Poet Mohsin Naqvi. KHud Apne Dil Mein KHarashen Utarna Hongi is written by Mohsin Naqvi. Enjoy reading KHud Apne Dil Mein KHarashen Utarna Hongi Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Mohsin Naqvi. Free Dowlonad KHud Apne Dil Mein KHarashen Utarna Hongi by Mohsin Naqvi in PDF.