شب بھر رواں رہی گل مہتاب کی مہک

شب بھر رواں رہی گل مہتاب کی مہک

پو پھوٹتے ہی خشک ہوا چشمۂ فلک

موج ہوا سے کانپ گیا روح کا چراغ

سیل صدا میں ڈوب گئی یاد کی دھنک

پھر جا رکے گی بجھتے خرابوں کے دیس میں

سونی سلگتی سوچتی سنسان سی سڑک

رخ پھیر کر جو ابر شبانہ میں چھپ گیا

جی میں پھرا کرے گی اسی چاند کی چمک

پھر پچھلے پہر آئنۂ اشک میں ظفرؔ

لرزاں رہی وہ سانولی صورت سویر تک

(816) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Shab Bhar Rawan Rahi Gul-e-mahtab Ki Mahak In Urdu By Famous Poet Zafar Iqbal. Shab Bhar Rawan Rahi Gul-e-mahtab Ki Mahak is written by Zafar Iqbal. Enjoy reading Shab Bhar Rawan Rahi Gul-e-mahtab Ki Mahak Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Zafar Iqbal. Free Dowlonad Shab Bhar Rawan Rahi Gul-e-mahtab Ki Mahak by Zafar Iqbal in PDF.