خوشا ضمانت غم

دیار یار تری جوشش جنوں پہ سلام

مرے وطن ترے دامان تار تار کی خیر

رہ یقیں تری افشان خاک و خوں پہ سلام

مرے چمن ترے زخموں کے لالہ زار کی خیر

ہر ایک خانۂ ویراں کی تیرگی پہ سلام

ہر ایک خاک بسر، خانماں خراب کی خیر

ہر ایک کشتۂ نا حق کی خامشی پہ سلام

ہر ایک دیدۂ پر نم کی آب و تاب کی خیر

رواں رہے یہ روایت، خوشا ضمانت غم

نشاط ختم غم کائنات سے پہلے

ہر اک کے ساتھ رہے دولت امانت غم

کوئی نجات نہ پائے نجات سے پہلے

سکوں ملے نہ کبھی تیرے پا فگاروں کو

جمال خون سر خار کو نظر نہ لگے

اماں ملے نہ کہیں تیرے جاں نثاروں کو

جلال فرق سر دار کو نظر نہ لگے

(279) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

KHusha Zamanat-e-gham In Urdu By Famous Poet Faiz Ahmad Faiz. KHusha Zamanat-e-gham is written by Faiz Ahmad Faiz. Enjoy reading KHusha Zamanat-e-gham Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Faiz Ahmad Faiz. Free Dowlonad KHusha Zamanat-e-gham by Faiz Ahmad Faiz in PDF.