درد اپنا میں اسی طور جتا رہتا ہوں

درد اپنا میں اسی طور جتا رہتا ہوں

حسب حال اس کو کئی شعر سنا رہتا ہوں

اک ہی جا رہنے کا ہے گھر پہ اسی گھر میں آہ

دل یہ رہتا ہے جدا اور میں جدا رہتا ہوں

بات میں کس کی سنوں آہ کہ اے مرغ چمن

شور میں اپنے ہی نالوں کے سدا رہتا ہوں

بارے اتنا ہے اثر درد کے افسانے میں

ایک دو شخص کو ہر روز رلا رہتا ہوں

بزم خوباں میں یہ سر گو کٹے رونے پہ مرا

شمع ساں اشک پر آنکھوں سے بہا رہتا ہوں

آہ و نالہ میں اگر کچھ بھی اثر ہے میرے

تو میں اس شوخ کو اک روز بلا رہتا ہوں

حسن اور عشق کا کیا ذکر کروں مت پوچھو

ان دنوں زیست سے بھی اپنی خفا رہتا ہوں

دل لگا جب سے مرا آہ تبھی سے جرأتؔ

کتنی ہی آفتیں ہر روز اٹھا رہتا ہوں

(509) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Dard Apna Main Isi Taur Jata Rahta Hun In Urdu By Famous Poet Jurat Qalandar Bakhsh. Dard Apna Main Isi Taur Jata Rahta Hun is written by Jurat Qalandar Bakhsh. Enjoy reading Dard Apna Main Isi Taur Jata Rahta Hun Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Jurat Qalandar Bakhsh. Free Dowlonad Dard Apna Main Isi Taur Jata Rahta Hun by Jurat Qalandar Bakhsh in PDF.