کتنا سکوت ہے رسن و دار کی طرف

کتنا سکوت ہے رسن و دار کی طرف

آتا ہے کون جرأت اظہار کی طرف

دشت وفا میں آبلہ پا کوئی اب نہیں

سب جا رہے ہیں سایۂ دیوار کی طرف

قصر شہی سے کہتے ہیں نکلے گا مہر نو

اہل خرد ہیں اس لیے سرکار کی طرف

وتنام و کوریا سے عدو کو نکال لیں

آئیں گے لوٹ کر لب و رخسار کی طرف

باقی جہاں میں رہ گیا غالبؔ کا نام ہی

ہر چند اک ہجوم تھا اغیار کی طرف

(186) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Kitna Sukut Hai Rasan-o-dar Ki Taraf In Urdu By Famous Poet Habib Jalib. Kitna Sukut Hai Rasan-o-dar Ki Taraf is written by Habib Jalib. Enjoy reading Kitna Sukut Hai Rasan-o-dar Ki Taraf Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Habib Jalib. Free Dowlonad Kitna Sukut Hai Rasan-o-dar Ki Taraf by Habib Jalib in PDF.