اے دل نشیں تلاش تری کو بہ کو نہ تھی

اے دل نشیں تلاش تری کو بہ کو نہ تھی

اپنے سے اک فرار تھا وہ جستجو نہ تھی

اظہار نارسا سہی وہ صورت جمال

آئینۂ خیال میں بھی ہو بہو نہ تھی

کیا سحر تھا کہ ہنستے ہوئے جان دے گئے

وہ بھی کہ جن کو تاب غم آرزو نہ تھی

کیا جانے اہل بزم نے کیا کیا سمجھ لیا

اخفائے آرزو تھی وہ چپ گفتگو نہ تھی

وہ کون سی سحر تھی کہ روئی نہ پھول پھول

وہ شام کون سی تھی کہ غم سے لہو نہ تھی

ہم تو فریفتہ تھے ضیاؔ دل کی آنچ پر

منظور محض دل کشیٔ رنگ و بو نہ تھی

(625) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Ai Dil-nashin Talash Teri Ku-ba-ku Na Thi In Urdu By Famous Poet Zia Jalandhari. Ai Dil-nashin Talash Teri Ku-ba-ku Na Thi is written by Zia Jalandhari. Enjoy reading Ai Dil-nashin Talash Teri Ku-ba-ku Na Thi Poem on Inspiration for Students, Youth, Girls and Boys by Zia Jalandhari. Free Dowlonad Ai Dil-nashin Talash Teri Ku-ba-ku Na Thi by Zia Jalandhari in PDF.